ہر جگہ دل لگی نہیں چلتی

7 جون 2018 ء

ہر جگہ دل لگی نہیں چلتی
عشق میں دل کی بھی نہیں چلتی

چارہ سازوں کا بھی ہے اپنا وقت
نبض بھی ہر گھڑی نہیں چلتی

میں تو کہتا ہوں مت گزر حد سے
دوست سے دشمنی نہیں چلتی

مجھ پہ کیا ہو گا اختیار مرا
آپ پر آپ کی نہیں چلتی

چارہ گر یہ ترا قصور نہیں
دل پہ چارہ گری نہیں چلتی

عاشقو جوئے شیر لا کے دکھاؤ
عشق میں شاعری نہیں چلتی

جوں کا توں ہے مکالمہ راحیلؔ
بات چلتی ہوئی نہیں چلتی

راحیلؔ فاروق

پنجاب (پاکستان) سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ کلام اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ