جدل حلال پہ کی کُشت و خوں حرام پہ کی

29 اکتوبر 2018 ء

جدل حلال پہ کی کُشت و خوں حرام پہ کی
پجاریوں نے خدائی خدا کے نام پہ کی

غضب کی شعلہ بیانی ہے منہ میں آگ ہے آگ
خدا نے خوب پکڑ شیخ کے کلام پہ کی

یہی عوام جو ہیں بھیڑ بکریوں کی طرح
خواص نے بھی حکومت انھی عوام پہ کی

زوالِ اُمّہ کے ہم لوگ ذمہ دار نہیں
یہ چوٹ وقت نے خود وقت کے امام پہ کی

خود اس نے حشر نہ برپا کیا تو پھر ناچار
توجہ مولویوں نے خدا کے کام پہ کی

یہ کس نے کفر پہ پھبتی کَسی ہے منبر سے
ستم ظریف نے کیا بات کس مقام پہ کی

جو ناگوار ہوئی شیخ کی طبیعت کو
وہ بات ختم ہی دنیا کے اختتام پہ کی

کسی کسی نے لیا کام عقل سے راحیلؔ
وگرنہ اس نے عنایت تو خاص و عام پہ کی

راحیلؔ فاروق

پنجاب (پاکستان) سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ کلام اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

خوش آمدید۔ آپ کی یہاں موجودگی کا مطلب ہے کہ آپ کو اردو گاہ کے جملہ قواعد و ضوابط سے اتفاق ہے۔ تشریف آوری کا شکریہ!