دل کے دشمن پیار کی پینگیں بڑھانے آ گئے

اردو شاعری

دل کے دشمن پیار کی پینگیں بڑھانے آ گئے
مارنے والے بچانے کے بہانے آ گئے

ناز اٹھوانے کی خاطر ناز اٹھانے آ گئے
دل دکھا کر جانے والے خود منانے آ گئے

دشت میں کمبخت رستے کیا بنانے آ گئے
لوگ دیوانوں کو دانائی سکھانے آ گئے

حق نہیں یارب کہ جنت کی ملے ان کو شراب
اٹھ کے مسجد سے جو میخانہ گرانے آ گئے

ہم قفس میں اتنے سجدے کر گئے صیاد کو
بجلیوں کی زد میں جتنے آشیانے آ گئے

عقل آئی عقل کو جب عشق سے پالا پڑا
ہوش جس کے اڑ گئے اس کے ٹھکانے آ گئے

میں ابھی پڑھ ہی رہا تھا وقت کے استاد سے
اشک خود تقدیر کا لکھا مٹانے آ گئے

شیخ کا راحیلؔ خطبہ پھر ادھورا رہ گیا
آ گئے دیوانے پھر غزلیں سنانے آ گئے

راحیلؔ فاروق

پنجاب (پاکستان) سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ کلام اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ