تجھ سے ملاقات الگ بات ہے

اردو شاعری

تجھ سے ملاقات الگ بات ہے
ظالم الگ بات الگ بات ہے

ہم تو عنایات کے منکر نہیں
ہم پہ عنایات الگ بات ہے

چیز الگ چیز سہی ساقیا
چیز کی بہتات الگ بات ہے

بات کی اوقات نہیں شیخ کی
شیخ کی اوقات الگ بات ہے

راہ میں ہر بات تماشا نہیں
جائیے حضرات الگ بات ہے

دھن ہے الگ بات کی تک بند کو
ساری خرافات الگ بات ہے

لب بھی کرامات ہیں اس کے مگر
لب پہ کرامات الگ بات ہے

یوں بھی ہے راحیلؔ تو شیریں مقال
شعر کی سوغات الگ بات ہے

راحیلؔ فاروق

پنجاب (پاکستان) سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ کلام اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ