ساغر کا تو نام چل رہا ہے

اردو شاعری

ساغر کا تو نام چل رہا ہے
آنکھوں سے کام چل رہا ہے

جس تال پہ دل دھڑک رہے ہیں
اس تال پہ جام چل رہا ہے

گردش میں رہے پیالہ ساقی
دنیا کا نظام چل رہا ہے

کوثر تو نہیں ہے میکدہ شیخ
جب تک ہیں عوام چل رہا ہے

پینا نظر آ گیا ہے ان کو
جینا بھی حرام چل رہا ہے

کافر نہیں میکدے میں کوئی
خالص اسلام چل رہا ہے

ساقی نے اذان تک نہیں دی
میخانہ تمام چل رہا ہے

راحیلؔ جو چھپ کے پی رہا تھا
پی کر سرِ عام چل رہا ہے

راحیلؔ فاروق

پنجاب (پاکستان) سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ کلام اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ