ذوق محدود، شوق لامحدود

غزل

زار

ذوق محدود، شوق لامحدود
مدتوں سے دھواں دھواں ہے وجود

مصحفِ درد سے شناخت ہوا
میں نہ شارع، نہ مہدیِ موعود

دل سنبھلتا سنبھل گیا لیکن
کچھ بکھر سا چلا ہے تار و پود

لفظ معنوں پہ ہو گئے ہیں فدا
راکھ میں شعلہ کر گیا ہے ورود

تجھے اندازہ ہی نہیں دل کا
ایک عالم ہے نیست و نابود

دوش و فردا کے پھیر میں راحیلؔ
ہے غنیمت یہ لمحۂ موجود

راحیلؔ فاروق

زار کے مصنف۔ پنجاب، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ غزل اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ