کوئی کروٹ تو شب بدلتی آج

غزل

زار

کوئی کروٹ تو شب بدلتی آج
دل کی حالت نہیں سنبھلتی آج

سننے والے کہاں گئے میرے
بات منہ سے نہیں نکلتی آج

ایک عفریت بن گئی ہے یاس
تم نہ آتے، یہ شب تو ٹلتی آج

وہی شکوے ہیں بے وفاؤں کے
اور بھی کوئی بات چلتی آج

دل کی راحیلؔ اگر سنی ہوتی
آنسوؤں پر کسک نہ پلتی آج

راحیلؔ فاروق

زار کے مصنف۔ پنجاب، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ غزل اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ