نہ ہوئی چارہ گری دنیا میں

غزل

زار

نہ ہوئی چارہ گری دنیا میں
ہم بھی تنہا تھے بھری دنیا میں

تیری اقلیم سرِ عرشِ بریں
میری شوریدہ سری دنیا میں

سبھی کھوٹے ہیں عمل کے سکے
ایک تقدیر کھری دنیا میں

نہ کسی کام کی دنیا اے گل!
نہ کوئی دیدہ وری دنیا میں

کتنی دشوار ہے، کتنی دشوار!
ایک یہ خود نگری دنیا میں

غنچۂ دل کو سہارے راحیلؔ
ہے کوئی شاخ ہری دنیا میں؟

راحیلؔ فاروق

زار کے مصنف۔ پنجاب، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ غزل اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ