کوئی زندہ رہے کہ مر جائے

غزل

زار

کوئی زندہ رہے کہ مر جائے
دل کی بازی نہ ہار کر جائے

مجھے بیتے دنوں کا رنج نہیں
جو بچی ہے، وہی گزر جائے

کاش اتنا بھی وقت ارزاں ہو
میں ٹھہر جاؤں، وہ ٹھہر جائے

کچھ سلامت نہیں رہا شاید
کوئی اب بھی بھلا نہ گھر جائے؟

موت بھی آ ہی جائے گی راحیلؔ
دیکھنا دل کو، دل نہ بھر جائے

راحیلؔ فاروق

زار کے مصنف۔ پنجاب، پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر۔

یہ غزل اپنے دوست احباب سے شریک کیجیے
Share on facebook
Share on twitter
Share on pinterest
Share on reddit
Share on linkedin
Share on whatsapp
Share on telegram
Share on email
لطفِ سخن کچھ اس سے زیادہ

ہم روایت شکن روایت ساز

پر

خوش آمدید!

باتیں ہماری یاد رہیں گی۔۔۔

تنبیہ